Qurbani ki asal rooh

Qurbani ki asal rooh

[vc_row full_width=”” parallax=”” parallax_image=””][vc_column width=”5/6″][vc_single_image image=”1048″ border_color=”grey” img_link_large=”” img_link_target=”_self”][vc_column_text css_animation=”bottom-to-top”]

قربانی کی اصل روح

ﻗﺮﺑﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﺗﻮ ﺍﻟﻠﮧ ﮐﯽ ﺭﺿﺎ ﻣﻘﺼﻮﺩ ﮨﻮﻧﯽ ﭼﺎﮨﯿﮯ ﻧﮧ
ﮐﮧ ﯾﮧ ﮐﮧ ﻣﻌﺎﺷﺮﮮ ﻣﯿﮟ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﻧﺎﮎ ﺍﻭﻧﭽﯽ ﮨﻮ. ﯾﮧ ﺟﻮ
ﺁﺝ ﮐﻞ ﺍﯾﮏ ﺭﺣﺠﺎﻥ ﺑﻦ ﺭﮨﺎ ﮐﮧ ﻓﻼﮞ ﻧﮯ ﺍﺗﻨﮯ ﮨﺰﺍﺭ ﮐﺎ
ﺑﮑﺮﺍ ﻟﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﻓﻼﮞ ﻧﮯ ﺍﺗﻨﮯ ﻻﮐﮫ ﮐﺎ ﺑﯿﻞ، ﯾﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﻗﺎﺑﻞ
ﻓﺨﺮ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺍﯾﮏ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﺳﮯ ﺑﮍﮪ
ﭼﮍﮪ ﮐﺮ ﻣﮩﻨﮕﺎ ﺟﺎﻧﻮﺭ ﺧﺮﯾﺪﻧﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﯽ ﻧﻤﺎﺋﺶ
ﮐﺮﻧﺎ ﺍﯾﮏ ﺍﯾﺴﺎ ﻋﻤﻞ ﮨﮯ ﺟﺲ ﺳﮯ ﻗﺮﺑﺎﻧﯽ ﮐﮯ ﺿﺎﺋﻊ
ﮨﻮﻧﮯ ﮐﺎ ﺍﻧﺪﯾﺸﮧ ﮨﮯ. ﺍﻟﻠﮧ ﮨﻤﯿﮟ ﺩﮐﮭﺎﻭﮮ ﺳﮯ ﺑﭽﺎﺋﮯ ﺍﻭﺭ
ﻗﺮﺑﺎﻧﯽ ﮐﯽ ﺍﺻﻞ ﺭﻭﺡ ﮐﻮ ﺳﻤﺠﮭﻨﮯ ﮐﯽ ﺗﻮﻓﯿﻖ ﻋﻄﺎ
ﻓﺮﻣﺎﺋﮯ.
ﻗﺮﺑﺎﻧﯽ ﮐﮯ ﮔﻮﺷﺖ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﺳﻨﺖ ﮐﮯ ﻣﻄﺎﺑﻖ ﺍﭘﻨﺎ
ﺣﺼﮧ ﺭﮐﮫ ﮐﺮ ﺑﺎﻗﯽ ﺩﻭ ﺣﺼﮯ ﺗﻘﺴﯿﻢ ﮐﺮﺩﯾﻨﮯ ﭼﺎﮨﯿﮯ
ﺍﻭﺭ ﮐﻮﺷﺶ ﮐﯽ ﺟﺎﺋﮯ ﮐﮧ ﺟﻦ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﻧﮯ ﻗﺮﺑﺎﻧﯽ
ﻧﮩﯿﮟ ﮐﯽ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﮔﻮﺷﺖ ﭘﮩﻨﭽﺎﯾﺎ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﺎﮐﮧ ﺳﺐ ﮐﻮ
ﻗﺮﺑﺎﻧﯽ ﮐﺎ ﮔﻮﺷﺖ ﮐﮭﺎﻧﮯ ﮐﺎ ﻣﻮﻗﻊ ﻣﻞ ﺳﮑﮯ. ﺑﺲ
ﺍﺩﻟﮯ ﮐﺎ ﺑﺪﻟﮧ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﻧﺎ ﭼﺎﮨﯿﮯ.

Naunehal (Children Magazine Pakistan)

[/vc_column_text][/vc_column][vc_column width=”1/6″][vc_single_image image=”993″ alignment=”center” border_color=”grey” img_link_large=”” img_link_target=”_self” css_animation=”right-to-left” title=”Aqiqa” link=”/aqiqa-online” img_size=”full”][vc_single_image image=”961″ alignment=”center” border_color=”grey” img_link_large=”” img_link_target=”_self” css_animation=”right-to-left” title=”Qurbani Online” link=”/qurbani-online” img_size=”full”][/vc_column][/vc_row][vc_row full_width=”” parallax=”” parallax_image=””][vc_column width=”1/1″][vc_column_text css_animation=”bottom-to-top”]

As seen on TV and Newspaper

[/vc_column_text][vc_basic_grid post_type=”post” max_items=”6″ style=”all” items_per_page=”10″ show_filter=”” element_width=”2″ gap=”15″ orderby=”date” order=”DESC” filter_source=”category” filter_style=”default” filter_align=”center” filter_color=”grey” filter_size=”md” button_style=”rounded” button_color=”blue” button_size=”md” arrows_design=”none” arrows_position=”inside” arrows_color=”blue” paging_design=”radio_dots” paging_color=”grey” loop=”” autoplay=”-1″ item=”837″ grid_id=”vc_gid:1443082516032-bba225d0-52ff-5″ taxonomies=”6″][/vc_column][/vc_row]

Qurbani ki Dua aur Tareeka (infradi aur ijtemai)

Qurbani ki Dua aur Tareeka (infradi aur ijtemai)

[vc_row full_width=”” parallax=”” parallax_image=””][vc_column width=”1/1″][vc_column_text]

Qurbani ke janwar ko Qibla rookh lita kar pehlay ye parhain:

إِنِّي وَجَّهْتُ وَجْهِيَ لِلَّذِي فَطَرَ السَّماَوَاتِ وَالأَرْضَ مِلَّةَ إِبْرَاهِيمَ حَنِيفَاً وَمَا أَنَا مِنَ الْمُشْرِكِينَ . إِنَّ صَلاتِي وَنُسُكِي وَمَحْيَايَ وَمَمَاتِي لِلَّهِ رَبِّ العَالَمِينَ لاَ شَرِيكَ لَهُوَبِذَلِكَ أُمِرْتُ وَأَنَا أَوَّلُ المُسْلِمِينَ ، اللَّهُمَّ مِنْكَ وَلَكَ

Translation: “I have turned my face to that Being who has created the skies and the Earth in the state of the Straight Deen of Ibrahim – and I am not amongst the Mushrikeen. Definitely, my Salaat, my Ibadat and my living and dying is all for Allah, who is the Lord of the worlds, and who has no partner. I have been ordered (all that passed) I am amongst the Muslimeen (the obedient). O Allah this sacrifice is due to You granting us the ability to do so and it is for You”. 
~Mishkat

عَنْ ke baad jis shakhs ya shakhsiat ki taraf se qurbani di jarahi hai unka name lijiye phir بِسْمِ اللَّهِ اللَّهُ أَكْبَرُ parh kar zibah kar dijiye

 [/vc_column_text][/vc_column][/vc_row]

قربانی کے فضائل و مسائل

عید قربان: ذوالحجہ کا سارا عشرہ ہی نیک عمل اور  ثواب کا ذریعہ ہے۔ مگر دسویں ذوالحجہ کا دن سب سے زیادہ معظم ہے ۔خدا ئے بزرگ و برتر نے اس دن کی فجر کی قسم ارشاد فرمائی ہے۔ والفجر مجھے فجر عید قربان کی قسم۔ اس دن میں ہر ایک نیک عمل بڑی فضیلت رکھتا ہے۔ مگر اس روز سب سے زیادہ محبوب عمل قربانی کرنا ہے۔ حدیث پاک میں ہے: صحابۂ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین نے رسالت مآبؐ کی خدمت میں عرض کیا۔ یا رسولؐ اللہ یہ قربانیاں کیسی ہیں۔ فرمایا تمہارے باپ ابراہیمؑ کی سنت ہے۔ صحابۂ کرامؓ نے عرض کیا یا رسولؐ اللہ ہمیں اس میں کیا ثواب ملے گا؟ فرمایا ہر بال کے بدلے ایک نیکی ملے گی۔ صحابۂ کرام نے عرض کیا یا رسولؐ اللہ صوف میں کیا ثواب ہے۔ فرمایا صوف کے ہربال میں ایک نیکی ملے گی۔

 

قرآن میں قربانی کا حکم: اللہ تعالیٰ نے ارشاد فرمایا۔

اِنَّا اَعْطَیْنَکَ الْکَوْثَر0 فَصَلِّ لِرَبِّکَ وَانْحَر۔

اے محبوبؐ! بے شک ہم نے تمہیں بے شمار خوبیاں عطا فرمائیں تو تم اپنے رب کے لئے نماز پڑھو او ر قربانی کرو۔ (سورۃ کوثر)

اس سے چند مسئلے معلوم ہوئے ایک یہ کہ پابندی نماز رب تعالیٰ کی نعمتوں کا بہترین شکریہ ہے۔ دوسرے یہ کہ قربانی اسلامی شعار ہے۔ اس کے بدلہ میں قیمت وغیرہ نہیں دی جا سکتی۔ تیسرے یہ کہ قربانی صرف مکہ معظمہ والوں یا حاجیوں کے لئے خاص نہیں جیسا کہ بعض لوگوں نے سمجھا ہے کیونکہ مدینہ پاک میں سرکار کو قربانی کا حکم ہو رہا ہے۔ (نور العرفان صفحہ990)

اس سے چند مسئلے معلوم ہوئے ایک یہ کہ پابندی نماز رب تعالیٰ کی نعمتوں کا بہترین شکریہ ہے۔ دوسرے یہ کہ قربانی اسلامی شعار ہے۔ اس کے بدلہ میں قیمت وغیرہ نہیں دی جا سکتی۔ تیسرے یہ کہ قربانی صرف مکہ معظمہ والوں یا حاجیوں کے لئے خاص نہیں جیسا کہ بعض لوگوں نے سمجھا ہے کیونکہ مدینہ پاک میں سرکار کو قربانی کا حکم ہو رہا ہے۔ (نور العرفان صفحہ990)

 

قربانی کرنے کی فضیلت

:ام المومنین حضرت سیدہ عائشہؓ سے مروی ہے کہ رسولؐ اللہ نے ارشاد فرمایا

دسویں ذوالحجہ کے دن انسان کا کوئی عمل قربانی سے زیادہ پیارا نہیں ہے اور اس کا جانور قیامت کے دن اپنے سینگوں بالوں اور کھروں کے ساتھ آئے گا اور قربانی کا خون ’زمین پر گرنے سے پہلے اللہ کے نزدیک درجہ مقبولیت کو پہنچ جاتا ہے سو تم قربانی خوش دلی سے کرو۔(1)مشکوٰۃ صفحہ 117 جلد ~

قربانی کے مسائل: قربانی واجب ہونے کی شرائط یہ ہیں۔ (1) مسلمان ہونا (2) مقیم ہونا۔ (3) تونگری یعنی مالک نصاب ہونا۔ یہاں  مال داری سے مراد وہی ہے جس سے صدقہ فطر واجب ہوتا ہے۔ وہ مراد نہیں کہ جس سے زکوٰۃ واجب ہوتی ہے۔(4)حریت یعنی آزاد ہونا۔ جو آزاد نہ ہو اس پر قربانی واجب نہیں ہے کہ غلام کے پاس مال ہی نہیں۔ لہٰذا

عبادت مالیہ اس پر واجب نہیں۔ مرد ہونا اس کے لئے شرط نہیں۔ عورتوں پر بھی قربانی واجب ہے جس طرح مردوں پر واجب ہوتی ہے۔ اس کے لئے بلوغت شرط ہے یا نہیں؟ اس میں اختلاف ہے اور نابالغ پر واجب ہے تو آیا خود اس کے مال سے قربانی کی جائے گی یا اس کے باپ اپنے مال سے قربانی کرے گا۔روایت یہ ہے کہ نہ خود نابالغ پر قربانی واجب ہے اور نہ اس کی طرف سے اس کے باپ پر واجب ہے اور اسی پر فتویٰ ہے۔ (درمختار)

مسئلہ: مالک نصاب نے قربانی کے لئے بکری خریدی تھی وہ گم ہو گئی اور اس شخص کا مال نصاب سے کم ہو گیا۔ اب قربانی کا دن آیا تو اس پر یہ ضروری نہیں کہ دوسرا جانور خرید کر قربانی کرے اور اگر وہ بکری قربانی ہی کے دنوں میں مل گئی اور یہ شخص اب بھی مالک نصاب نہیں ہے تو اس پر بکری کی قربانی واجب نہیں ہے۔ (عالمگیری)مسئلہ: قربانی کے وقت میں قربانی کرنا ہی لازم ہے کوئی دوسری چیز اس کے قائم مقام نہیں ہو سکتی۔ مثلاً بجائے قربانی کے اس نے بکری یا اس کی قیمت صدقہ کر دے، یہ کافی نہیں ہے۔ اس میں نیابت ہو سکتی ہے یعنی خود کرنا ضروری نہیں دوسرے کو اجازت دے دی اس نے کر دی یہ ٹھیک ہے۔ (عالمگیری)قربانی کا وقت: مسئلہ: قربانی کا وقت دسویں ذی الحجہ کے طلوع ِ صبح صادق سے بارہویں کے غروب آفتاب تک ہے۔ ان دنوں کو ایام نحر کہتے ہیں۔ گیارہ سے تیرہ‘ تین دنوں کو ایام تشریق کہتے ہیں۔مسئلہ: دسویںتاریخ کے بعد کی دونوں راتیں ایام نحر میں داخل ہیں۔ ان میں بھی قربانی ہو سکتی ہے مگر رات میں ذبح کرنا مکروہ ہے۔ (عالمگیری)مسئلہ:پہلا دن یعنی دسویں تاریخ سب سے افضل ہے پھر گیارہویں اور پچھلا دن یعنی بارہویں سب سے کم درجہ ہے۔مسئلہ: ایام نحر میں قربانی کرنا قیمت کے صدقہ کرنے سے افضل ہے۔ کیوں کہ قربانی واجب ہے یا سنت ،اور صدقہ کرنا ثواب ہے۔ لہٰذا قربانی افضل ہوئی اور وجوب کی صورت میں بغیر قربانی کئے عہدہ بر آنہیں ہو سکتا۔ (عالمگیری)مسئلہ: شہر میں قربانی کی جائے تو شرط یہ ہے کہ نماز عید پڑھنے کے بعد کرے۔ لہٰذا نماز عید سے پہلے شہر میں قربانی نہیں ہو سکتی اور دیہات میں چونکہ عید گاہ  نہیں ہے۔ یہاں طلوع فجر کے بعد سے ہی قربانی ہو سکتی ہے۔ دیہات میں بہتر یہ ہے کہ طلوع آفتاب کے بعد قربانی کی جائے اور شہر میں بہتر یہ ہے کہ عید کا خطبہ ہو چکنے کے بعد قربانی کی جائے۔مسئلہ: منیٰ میں چونکہ عید کی نماز نہیں ہوتی۔ لہٰذا وہاں جو قربانی کرنا چاہے طلوع فجر کے بعد سے کر سکتا ہے۔ اس کے لئے وہی حکم ہے جو دیہات کا ہے۔ (درمختار )مسئلہ: قربانی کی منت مانی اور یہ معین نہیں کیا کہ گائے کی قربانی کرے گا یا بکری کی۔ تو منت صحیح ہے ۔بکری کی قربانی کر دینا کافی ہے اور بکری کی قربانی کی منت مانی تو اونٹ یا گائے قربانی کر دینے سے منت پوری ہو جائے گی۔ منت کی قربانی میں سے کچھ نہ کھائے بلکہ سارا گوشت وغیرہ صدقہ کر دے۔ اور کچھ کھالیا تو جتنا کھایا اس کی قیمت صدقہ کرے۔ (عالمگیری)قربانی کے جانور: قربانی کے جانور تین قسم کے ہیں (1) اونٹ (2) گائے (3) بکری۔بکری ہر قسم میں اس کی جتنی نوعیں ہیں سب داخل ہیں۔ نرؔ اور مادہ ؔ،خصیؔاور غیر خصیؔ سب کا ایک حکم ہے یعنی سب کی قربانی ہو سکتی ہے۔ بھینس گائے میں شمار ہے اس کی بھی قربانی ہو سکتی ہے۔ بھیڑ اور دنبہ بکری میں داخل ہیں۔ ان کی بھی قربانی ہو سکتی ہے۔ (عالمگیری)قربانی کے جانوروں کی عمریں: قربانی کے جانور کی کم از کم یہ عمر ہونی چاہئے۔ اونٹ پانچ سال کا اور گائے دو سال کی اور بکری ایک سال کی اس سے عمر کم ہو تو قربانی جائز نہیں۔ زیادہ ہو تو جائز ہے بلکہ افضل ہے۔ ہاں دنبہ یا بھیڑ کا بچہ 6 ماہ کا اگر اتنا بڑا ہو کہ دور سے دیکھنے میں سال بھر کا معلوم ہوتا ہو تو اس کی قربانی جائز ہے۔ (درمختار)قربانی کا جانور کیسا ہونا چاہئے: قربانی کے جانور کو عیب سے خالی ہونا چاہئے ۔ زیادہ عیب ہو تو ہوگی ہی نہیں۔ جس کے پیدائشی سینگ نہ ہوں اس کی قربانی جائز ہے۔  جس  جانور کے خصئے نکال لئے گئے ہوں ان کی قربانی جائز ہے۔ خارشی جانور کی قربانی جائز ہے جبکہ فربہ ہو اور اتنا لاغر کہ ہڈی میں مغز نہ رہا ہو تو جائز نہیں۔ (درمختار)مسئلہ: بھینگے جانور کی قربانی جائز ہے۔ اندھے جانور کی قربانی جائز نہیں ہے اور کانا جس کا کانا پن ظاہر ہو اس کی بھی قربانی ناجائز ہے۔  جس جانور کے کان ؔ یا دمؔ یا چکیؔ کٹے ہوں یعنی عضو تہائی سے زیادہ کٹا ہو۔ ان سب کی قربانی ناجائز ہے ۔ جس جانور کے پیدائشی کان نہ ہوںیا ایک کان نہ ہو اس کی قربانی جائز ہے۔ (ہدایہ‘ درمختار‘ عالمگیری)مسئلہ: جس کے دانت نہ ہوں۔ یا جس کے تھن کٹے ہوں یا خشک ہوں۔ اس کی قربانی ناجائز ہے۔ بکری میں ایک تھن کا خشک ہونا ناجائز ہونے کے لئے کافی ہے اور گائے بھینس میں دو خشک ہوں تو ناجائز ہے۔

AQEEQAH SERVICE IN KARACHI, PAKISTAN

AQEEQAH SERVICE IN KARACHI, PAKISTAN

Aqeeqah or Sadqa animal home delivery, relative place, donation to poor, NGO or Charitable organization of your choice in Pakistan.

Making it easier for muslims specially Pakistanis so they can perform Aqeeqah in time and can save time, they don’t need to go anywhere, just place your order by weight and type of animal you want give for allah’s blessing, we will take care of every thing, We deliver it to you door step in karachi, at your relative place or can give according to your order to NGO, charitable organization of your choice and we also provide pictures of process and receipt of charity in case.

A leading Pakistan’s animal supplier and exporter offering highest quality, wholesome & nutritious fresh, goat, lamb, cow, camel, qurbani, bakra meat slaughtering service

 

Online qurbani and aqiqah in Pakistan, Australia, Canada, UAE, USA, UK, South Africa and world wide

When the child is born akika (sacrificing of goat) is performed, why?n when it can be performed, on which day?

The Answer: The sacrifice of akika is not fard. It is sunnah.

A person can perform it if he wants or vice versa. A person who does not slaughter a sacrifice is not regarded to have committed a sin. A person who slaughters one will get its reward. The sacrifice slaughtered in eid al-adha is wajib according to Hanafi madhhab.There are some conditions for the wujub of sacrifice. It is wajib for someone who meets those conditions to slaughter an animal.

For whom is Qurban (Sacrifice) wajib?
The following conditions are necessary for a person in order to slaughter an animal:
1 – To be a Muslim.
2 – To be free
3 – To be a resident, not a traveler.
4 – To have enough money that necessitates sadaqah fitrah..
5 – To become sane and mature.

The fifth condition is controversial. According to some scholars, it is not necessary to become sane and baligh (mature, developed) for sacrifice to become wajib. It is necessary for a rich child and insane person to sacrifice an animal. Their parents should slaughter a sacrifice for them. The amount of nisab (minimum amount) for zakat and sadaqah fitra is 80 grams of gold or 561 grams of silver.
Mehmet Dikmen

 

Perform Akika Online

Qurbani ke janwar Online pasand karain aur janwar ghar bethay hasil karain

Qurbani ke janwar Online pasand karain aur janwar ghar bethay hasil karain

Karachi samait mulk bhar main internet kay zariye qurbani kay janwaro ki online marketing ka rujhan zor pakar rahata ja raha hai. log sehat mand, tagray aur khobsorat janwar mukhtalif websites par pasan kar ke ghar bethay hasil kar rahe hain.

is waqt karachi main chhoti bari mukhtalif companiyan janwaron ki online farokht kay karobar se munsalik hain. as silsilay main karachi ki mukhtalif shahrahon par tash’heeri banners bhi lagai gai hain. is kay sath sath overseas Pakistanion ki kurbani ki zarooriat bhi poori ki ja rahi hain.

Super high way par lagnay wali Pakistan ki sab se bari mawaishi mandi main bhi janwaron ki online marketing ki jarahi hai. logon main online janwaron ki khareedari main dilchaspi kay baais ye karobar musalsal maqbool hota ja raha hai aur is karobar se munsalik logon ki tadad main bhi din ba din izafa hota ja raha hai.

mawaishi mandi main sakht security ke bawajod aiy din daktian ho rahi hain aur log adam tahafuz ka shikar ho rahe hain. jab ke QurbaniOnline se logon kay paisa aur waqt dono ki bachat  ho jati hai.Ins